سفر حج پر روانگی

سفر حج پر روانگی

سرکاری سکیم کے تحت جانے والے عازمین حج، وزارت حج کے طلاع نامہ کے مطابق حاجی کیمپ جائیں اور وہاں سے پاسپورٹ، ٹکٹ زر مبادلہ اور شناختی لاکٹ وغیرہ حاصل کریں۔ پرائیویٹ سکیم کے تحت جانے والے عازمین حج اپنے حج آرگنائزرز سے یہ اشیا حاصل کریں۔

ایک یا دو دن پہلے حاجت وغیرہ بنوالیں، ناخن کٹوالیں، مونچھیں ترشوالیں، غیر ضروری بال صاف کر لیں۔ خواتین کانچ کی چوڑیاں اُتار دیں۔ نیل پالش وغیرہ صاف کر لیں۔

روانگی سے پہلے یہ تصور کر لیں کہ آپ سفر آخرت پر روانہ ہو رہے ہیں۔ سامانکی پڑتال کر لیں۔ ضروری کاغذات چیک کر لیں۔

غسل کریں اور سفر کا لباس پہن کر دو یا چار نفل ادا کریں اور اللہ تعالیٰ سے سفر میں آسانی کی دعا کیجئے۔

گھر سے نکلتے وقت یہ دعا پڑھیں۔ بِسْمِ اللہِ تَوَکَّلْتُ عَلَی اللہِ لَا حَوْلَ وَلَا قُوَّۃَ اِلَّا بِاللہِ

حاجی کیمپ میں اپنی فلائٹ کی روانگی سے آٹھ گھنٹے پہلے پہنچ جائیں۔

حاجی کیمپ میں صبر و تحمل کا خصوصی مظاہرہ کریں۔

خدمت خلق ایک عبادت ہے۔اس مقدس سفر میں خدمت کا کوئی موقع ہاتھ سے نہ جانے دیں۔ یہ عبادت آپ کے حج کو مبرور و مقبول بنانے کا سبب بن سکتی ہے۔

احرام باندھنے سے پہلے یہ طے کیجئے کہ آپ نے کون سا حج کرنا ہے۔ حج کی تین قسمیں ہیں۔

حج افراد: صرف حج     

حج تمتع: عمرہ کے بعد حج کرنا     

حج قران: عمرہ اور حج ایک ساتھ     

پاکستانیوں کے لئے حج تمتع کا مشورہ دیا جاتا ہے۔ حج تمتع میں میقات سے احرام باندھا جاتاہے۔ اور مکہ مکرمہ پہنچ کر عمرہ کر کے احرام کھول دیا جاتا ہے۔ پھر 8ذی الحجہ کو دوبارہ احرام باندھا جاتا ہے۔ حج قرن میں میقات سے عمرہ اور حج کا احرام ایک ساتھ باندھا جاتا ہے۔ اور پھر حج کی ادائیگی تک احرام کی حالت میں ہی رہا جاتا ہے۔ حج اور عمرہ اکٹھا کرنے کی نیت ایک ساتھ کی جاتی ہے۔ حج افراد میں صرف حج کی نیت کی جاتی ہے۔

حج تمتع کرنے والے عمرہ کرنے کی نیت سے گھر پر غسل اور وضو کریں۔ حاجی کیمپ میں وضو کی تجدید کریں۔

ان سلے کپڑے کی ایک چادر بطور تہبند ناف سے پنڈلیوں تک باندھیں۔ ناف ڈھانپنا انتہائی ضروری ہے۔

دوسری چادر اوڑھ لیں اور سر ڈھانپ لیں۔

دو رکعت با نیت احرام ادا کریں۔ پہلی رکعت میں سورۃ کافرون اور دوسری رکعت میں سورۃ اخلاص پڑھیں۔ سلام پھیرتے ہی سر ننگا کر لیں۔

تین مرتبہ تلبیہ پڑھیں، درود شریف پڑھیں اور عمرہ ادا کرنے کی نیت کریں۔ تلبیہ یہ ہے۔ لَبَّیْکَ اَللّٰھُمَّ لَبَّیْکَ لَبَّیْکَ لَا شَرِیْکَ لَکَ لَبَّیْکَ اِنَّ الْحَمْدَ وَالنِّعْمَۃَ لَکَ وَالْمُلْکَ لَا شَرِیْکَ لَکَ

آپ تلبیہ ہوائی جہاز کے ٹیک آف کرنے پر یا میقات آنے پر بھی پڑھ سکتے ہیں۔ حضور نبی کریم ﷺ نے اس وقت لبیک پکارا تھا جب آپ ﷺ سواری پر بیٹھ گئے تھے اور سواری میقات سے چلنے کے لئے آپ ﷺ کو اٹھا چکی تھی۔

نیت کے بعد دعا مانگیں کہ اللہ تعالیٰ آپ کا یہ عمرہ قبول فرمائے اور اسے آپ کے لئے آسان فرمائے۔

مرد حضرات احرام کی تہہ بند باندھے ہوئے ہر وقت ناف ڈھاپنے رکھنے کا خصوصی اہتمام کریں۔ آپ کا تہبند کسی صورت ناف سے نیچے نہ گرنے پائے۔ خواتین اپنے مکمل ستر کا اہتمام کریں۔ ان کی آستینیں پوری ہوں، گلا بند ہو، سینہ ڈھکا ہو، کپڑے موٹے ہوں۔ باریک (Transparent) چُست اور اعضائے جسمانی کو نمایاں کرنے ولاے لباس سے اجتناب کریں۔ احرام میں خواتین شوخ لباس بھی نہ پہنیں، عام حالات میں بھی خواتین کا لباس مخالف جنس اور غیر مسلم اقوام کے مشابہ نہیں ہونا چاہئے۔

اب آپ پر احرام کی پابندیاں عائد ہو گئی ہیں۔

Share the Work